تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

حکومت کی جانب سے اہم قدم اٹھاتے ہوئے فیصلہ کیا گیا ہے

  19 ‬‮نومبر‬‮ 2017   |    09:37     |     کارو بار

اسلام آباد (ڈیلی آزاد نیوز ڈیسک) حکومت کی جانب سے اہم قدم اٹھاتے ہوئے فیصلہ کیا گیا ہے کہ اب یکم دسمبر سے تیل کپنیاں اور پمپ مالکان اپنا منافع خود طے کریں گے ۔تفصیلات کے مطابق حکومت نے اگلے ماہ سے ڈیزل کی قیمت بھی سرکاری کنٹرول سے نکالنے کا فیصلہ کرلیا۔ یکم دسمبر سے تیل کمپنیاں اور پمپ مالکان اپنا منافع خود طے کریں گے۔

حکام وزارت توانائی کے مطابق نئے ضوابط کے تحت تیل کمپنیوں کو ڈیزل ملاؤٹ چیکنگ کا میکانزم بھی تیار کرنا ہو گا۔ ملاؤٹ کا پتہ لگانے کیلئے فیول مارکر نظام 6 ماہ میں تیار کرنا ہو گا‘ آئل مارکیٹنگ کمپنیز کو کم از کم 20دن کا ڈیزل سٹاک رکھنا ہو گا۔واضح رہے گزشتہ کئی ماہ سے وری دنیا میں تیل کے نرخوں میں خاطر خواہ کمی ہو ئی ہے اور پوری دنیا میں تیل کی قیمتوں میں کمی کی گئی تھی اسی کے پیش نظر پاکستانی حکومے نے بھی پاکستان میں بھی تیل کی قیمتوں کو کم کر دیا اس سارے دور مین حکومت اس بات کا کریڈٹ خود لیتی ہے اور عوام میں زور و شور س اپیل بھی چلائی گئی تھی کہ یہ حکومت کا کام ہے کہ تیل کی قیمتوں میں کمی کر دی گئی ہے مگر اپوزیشن کی جانب سے بھی کافی شور برپا ہوتا رہا کہ حکومت تیل کو اس سے بھی کم نرخوں پر لے کے آیے کیوں کہ پوری دنیا میں تیل کی قیمت کافی کم ہو ئی ہے۔اب حکومت کی جانب سے انتہائی حیران کن قدم اٹھاتے ہوئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ حکومت نے اگلے ماہ سے ڈیزل کی قیمت بھی سرکاری کنٹرول سے نکالنے کا فیصلہ کرلیا۔ یکم دسمبر سے تیل کمپنیاں اور پمپ مالکان اپنا منافع خود طے کریں گے۔ حکام وزارت توانائی کے مطابق نئے ضوابط کے تحت تیل کمپنیوں کو ڈیزل ملاؤٹ چیکنگ کا میکانزم بھی تیار کرنا ہو گا۔ ملاؤٹ کا پتہ لگانے کیلئے فیول مارکر نظام 6 ماہ میں تیار کرنا ہو گا‘ آئل مارکیٹنگ کمپنیز کو کم از کم 20دن کا ڈیزل سٹاک رکھنا ہو گا

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
اپنی رائے کا اظہار کریں -

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

بزنس خبریں

تازہ ترین خبریں

تازہ ترین تصاویر


>