تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

ایسے بیٹھنا اب خطرے سے خالی نہیں

  15 جون‬‮ 2017   |    03:38     |     صحت و زندگی

ٹانگ پر ٹانگ رکھ کے بیٹھنے کی عادت خواتین کے ساتھ ساتھ مردوں کو بھی ہوتی ہے اور یہ عادت سب لوگوں میں اتنی عام ہوگئی ہے کہ ان کو دوسری طرح بیٹھنا اب دشوار لگتا ہے۔لیکن شاید وہ افراد یہ نہیں جانتے کہ ٹانگ پر ٹانگ رکھ کے بیٹھنے کے کتنے زیادہ نقصانات ہیں۔ اس طرح بیٹھنے کے کیا نقصانات ہیں، یہ آج ہم آپ کو بتائیں گے۔۔ ٭جو لوگ کئی کئی گھنٹوں تک ٹانگ پر ٹانگ رکھ کے بیٹھے رہتے ہیںان میں پیرالائز کردینے والی بیماری جنم لے سکتی ہے۔اس کے باعث آپ کو رگوںکے الجھنے کا مسئلہ بھی درپیش آسکتا ہے۔ ٭ دوہزار دس میں ایک تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ جو افراد بہت دیر تک ٹانگ پر ٹانگ رکھ کے بیٹھتے ہیں ان کا بلڈ پریشر بڑھ جانے کا خطرہ لاحق ہوجاتا ہے۔اگر آپ میں بلڈ پریشر کا مسئلہ نہیں بھی ہو پھر بھی ٹانگ پر ٹانگ رکھ کے بیٹھنے سے یہ بیماری جنم لے سکتی ہے۔ ٭ اس طرح بیٹھنے سے آپ کے جسم کے ایک حصے میں خون کی روانی ہوتی ہے۔جس کے باعث آپ کے جسم میں بلڈ پریشر جیسی بیماری پیدا ہوجاتی ہے۔ ٭ ٹانگ پر ٹانگ رکھ کے بیٹھنے سے ٹانگ کا اندرونی مسل چھوٹا ہوجاتا ہے اور بیرونی مسل بڑا ہوجاتا ہے ۔ جس کے باعث لوگوں میں جوڑوں کے درد جیسی بیماری پیدا ہوجاتی ہے۔

٭ ٹانگ پر ٹانگ رکھ کے بیٹھنے کا ایک اور نقصان یہ بھی ہے کہ اس سے آپ کے پاﺅں کی رگیں الجھ بھی سکتی ہیں۔جب آپ ٹانگ پر ٹانگ رکھ کے بیٹھتے ہیںتو اس سے آپ کے ٹانگوں میں موجود خون کے چھوٹے چھوٹے کلوٹس میں سے خون کی روانی روک جاتی ہے ، جس کے باعث آپ کے رگوں میں سوجن ہوجاتی ہے۔ جوکہ یقینا ایک خطرناک بات ہے۔ ٭ حالیہ دور میں ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق جو افراد تین گھنٹوں سے زیادہ ٹانگ پر ٹانگ رکھ کے بیٹھتے ہیں، ان کو پیٹھ میں درد، گردن میں درد اور کمر میں درد جیسی شکایت کا سامنا ہوتا ہے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
81%
ٹھیک ہے
14%
کوئی رائے نہیں
3%
پسند ںہیں آئی
3%
اپنی رائے کا اظہار کریں -

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مین

loading...

تازہ ترین خبریں

تازہ ترین تصاویر


>