تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

مصری خاتون سکالر نے کفار کی خواتین سے جبری زنا کو جائز قرار دے دیا

  18 مئی‬‮ 2017   |    04:22     |     دلچسپ و عجیب

قاہرہ (ڈیلی آزادنیوزڈیسک) خاتون سکالرپروفیسر سعود صالح جو کہ مصر کی الزہرا یونیورسٹی سے تعلق رکھتی ہیں نہ مخصوص حالات میں دشمن کی خواتین سے زنا الجبر کو جائز قرار دے دیا ہے ۔ موصوفہ کہتی ہیں کہ کفار کی تذلیل کیلئے اسلامی شریعت کفار خواتین کی عصمت دری کی اجاز ت دیتی ہے ۔ایک ٹی وی انٹرویو میں بات کرتے ہوئے پروفیسر سعود صالح نے ایشیائی ممالک سے خواتین کو بطور جنسی غلام خریدنے کی حوصلہ شکنی کی، ان کا کہنا تھا کہ شریعت نے مسلمان مردوں کو غلام عورتوں کے ساتھ جنسی فعل کرنے کا جائز حق دے رکھا ہے. انہوں نے اپنی بات کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ جنگ کے دوران قیدی بنائی گئی دشمن کی خواتین مسلمان مردوں کی ملکیت ہیں، وہ فوجی کمانڈر یا دیگر مسلمانوں کی ملکیت ہیں، جن کے ساتھ وہ اسی طرح جنسی فعل کرسکتے ہیں جس طرح وہ اپنی ازواج کے ساتھ کرتے ہیں. انٹرنیشنل نیوز ویب سائٹ کے مطابق اس بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے فلوریڈا سٹیٹ کالج کے تاریخ دان ڈاکٹر اینڈریو ہولڈ نے سخت افسوس کا اظہار کیا. ان کا کہنا تھا کہ مسلم دنیا کی معتبر ترین مذہبی یونیورسٹی، جو کہ ایک ہزار سال سے علمی دنیا میں باعزت مقام رکھتی ہے۔

کی پروفیسر کی طرف سے اس طرح کا بیان سامنے آنا انتہائی افسوسناک ہے اور انہیں یہ بات سن کر صدمہ پہنچا. ان کا مزید کہنا تھا کہ اس طرح کے نظریات دہشت گردوں کو یہ جواز فراہم کریں گے کہ وہ کسی کو بھی اپنا دشمن قرار دے کر ان کی خواتین کو غلام بنا کر ان کی عصمت دری کر سکتے ہیں. واضح رہے کہ پاکستان سمیت متعدد مسلمان ممالک میں سرگرم دہشت گرد صرف خود کو ہی مسلمان قرار دیتے ہیں، جبکہ دیگر کروڑوں مسلمانوں کو کفار کے ساتھی یا بھٹکے ہوئے اور گمراہ لوگ قرار دیتے ہیں، اور انہیں اپنا دشمن قرار دے کر ان پر آئے روز گولیاں برساتے ہیں اور خود کش حملے کرتے ہیں۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
14%
ٹھیک ہے
9%
کوئی رائے نہیں
8%
پسند ںہیں آئی
70%
اپنی رائے کا اظہار کریں -

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مین

loading...

تازہ ترین خبریں

تازہ ترین تصاویر


>