تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

جسٹس آصف سعید کھوسہ کی حدیبیہ پیپرملز کیس کی سماعت سے معذرت

  13 ‬‮نومبر‬‮ 2017   |    10:15     |     تازہ ترین

اسلام آباد (ویب ڈیسک) جسٹس آصف سعید کھوسہ نے حدیبیہ پیپرملز کیس کی سماعت سے معذرت کرلی جس کے بعد حدیبیہ پیپر ملز کیس کی سماعت کرنے والا بینچ ٹوٹ گیا۔ ریفرنس کی سماعت غیر معینہ مدت کےلیے ملتوی کردی گئی۔جسٹس آصف کھوسہ نے کہا کہ لگتا ہے سپریم کورٹ آفس نے میرا فیصلہ نہیں پڑھا،

اپنے فیصلے میں حدیبیہ پیپر ملز کھولنے کا حکم دیا تھا،میرے بینچ کے سامنے کیس لگانا آفس کی غلطی ہے۔بینچ کے سربراہ جسٹس آصف سعیدنے کہا کہ 20 اپریل کے فیصلے میں حدیبیہ پیپرملزریفرنس پر14پیراگراف لکھے۔نیب پراسیکیوٹرنے کہا کہ آئندہ ہفتے کیس سماعت کے لیے مقررکریں۔ا س پر جسٹس آصف سعیدکھوسہ نے کہا کہ نیب کو کارروائی کا کہہ چکا ہوں۔واضح رہے کہ حدیبیہ ریفرنس میں لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل کی سماعت آج سپریم کورٹ میں ہونا تھی۔ جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں تین رکنی بینچ کو نیب کی اپیل سننا تھی۔چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے حدیبیہ پیپر ملز ریفرنس دوبارہ کھولنے سے متعلق نیب کی اپیل پر بینچ تشکیل دیا ہے، 3 رکنی بنچ میں جسٹس دوست محمد اور جسٹس مظہر عالم میاں خیل شامل ہیں۔سپریم کورٹ کے رجسٹرار آفس نے نیب کے پراسیکیوٹر جنرل کو نوٹس جاری کردیئے ہیں، قومی احتساب بیورو نے 20 ستمبر کو لاہور ہائی کورٹ کی طرف سے 2014 ء میں حدیبیہ پیپرز ملز کیس کی کارروائی ختم کرنے کے خلاف اپیل دائر کی تھی۔پاناما بینچ کے آبزرویشن پر سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی، درخواست پاناما کیس کی سماعت کرنے والے بنچ کی آبزرویشن کے اور کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی کے سامنے آنے والی نئی شہادتوں کی روشنی میں لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف دائر کی گئی تھی۔نیب کے پراسیکوٹر جنرل کی طرف سے آئین کے آرٹیکل 185 تھری کے تحت دائر کی گئی،اپیل میں شریف خاندان کے تمام افراد کو مدعا علیہ بنایا گیا ہے۔17 سال قبل نیب نے نواز شریف، میاں محمد شریف ، شہباز شریف ،عباس شریف اور ان کی اہلیہ صبیحہ، نواز شریف کے بچوں حسین، حسن اور مریم نواز اور وزیر اعلی پنجاب کے بیٹے حمزہ شہباز کے خلاف احتساب عدالت میں ریفرنس دائر کیا تھا۔ریفرنس میں الزام لگایا گیا تھا کہ شریف خاندان کے افراد نےحدیبیہ پیپرز ملز کے ذریعے ایک ارب 24 کروڑ روپے کے اثاثے غیر واضح ذرائع سے بنائے جو ان کی آمدن سے مطابقت نہیں رکھتے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
اپنی رائے کا اظہار کریں -

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مین

loading...

تازہ ترین خبریں

تازہ ترین تصاویر


>