تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

مٹھی ،ہندو لڑکی نے مسلم نوجوان سے شادی کیلئے  اسلام قبول کرلیا،والدین کا  لڑکی کو عدالتی تحویل میں لینے کا مطالبہ

مٹھی ،ہندو لڑکی نے مسلم نوجوان سے شادی کیلئے اسلام قبول کرلیا،والدین کا لڑکی کو عدالتی تحویل میں لینے کا مطالبہ

  18 جون‬‮ 2017   |    01:04     |     پاکستان

مٹھی(ڈیلی آزادنیوزڈیسک ) تھرپارکر کے گاوں ورنھاریو میں ہندو لڑکی نے مذہب تبدیل کر کے مسلم نوجوان سے شادی کرلی،لڑکی کے والدین نے لڑکی کو عدالتی تحویل میں لینے کا مطالبہ کر دیا ۔ تفصیلات کے مطابق تھرپارکر کی تحصیل ورنھاریو کی رہائشی 16سالہ لڑکی رویتا کماری سترام نے مبینہ طور پر گھر سے فرار ہوکر نوجوان علی

نواز شاہ سے مذہب تبدیل کرکے شادی کرلی اور لڑکی کا اسلامی نام گلناز رکھا گیا ہے۔واقعے بعد لڑکی کے والدین نے گاوں چھوڑ کر مٹھی میں اپنے رشتے داروں میں پناہ لے لی، لڑکی کے والد سترام کی فریاد پر دانو داندل پولیس اسٹیشنمیں لڑکی کے اغوا کا مقدمہ علی نواز شاہ اور 2 ساتھیوں کے خلاف درج کرلیا گیا ہے، لیکن تاحال کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی۔دوسری جانب نومسلمہ گلناز اور اس کے شوہر نے سندھ ہائی کورٹ میں تحفظ کی درخواست دائر کردی ہے جبکہ رویتا عرف گلناز کے والدین نے بھی لڑکی کی بازیابی کے لیے عدالت میں درخواست دائر کی ہے۔ عدالت نے رویتا عرف گلناز کی درخواست پر والدین کو 30 جون کو عدالت میں طلب کرلیا ہے۔جبکہ لڑکی کے والد نے کہا ہے کہ اس کی لڑکی کی عمر16سال ہے اور اس عمر میں اس کو زبردستی اغوا کرکے مذہب تبدیل کرایا گیا ہے۔ والدین نے لڑکی کو عدالتی تحویل میں لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
اپنی رائے کا اظہار کریں -

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مین

loading...

تازہ ترین تصاویر


>