تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

پنجاب بھر میںشہدا گکھڑ پلازہ کی آٹھویں برسی کے موقع پر ریسکیو1122  نے شہدا  کو خراج تحسین پیش کیا

پنجاب بھر میںشہدا گکھڑ پلازہ کی آٹھویں برسی کے موقع پر ریسکیو1122 نے شہدا کو خراج تحسین پیش کیا

  20 دسمبر‬‮ 2017   |    06:28     |     پاکستان

لاہور (ڈیلی آزاد) ڈائریکٹر جنرل پنجاب ایمرجنسی سروس (ریسکیو1122) ڈاکٹر رضوان نصیر (ستارہ امتیاز)کی ہدایت پر پنجاب بھر میںشہدا گکھڑ پلازہ کی آٹھویں برسی کے موقع پر خصوصی تقریبات کا انعقاد کرکے 13فائر فائٹرز کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔ان گمنام ہیروزنے 20دسمبر 2008کو گکھڑ پلازہ میں لگنے والی آگ میں فائیر فائنٹنگ اور ریسکیو آپریشن کرتے ہوئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرکے فائر سروس کی تاریخ بد ل دی ۔

اس حوالے سے ایمرجنسی سروسز اکیڈمی میں فائونڈر ڈائریکٹر جنرل ریسکیو1122 ڈاکٹر رضوان نصیر کی خصوصی دعوت پرشہداء گکھڑ پلازہ کی نویں برسی کے موقع پر قاری سوہیب احمد میر محمدی معروف قاری اور اسلامک سکالر نے ایمرجنسی سروسز اکیڈمی میں دعائیہ تقریب میں شرکت کی ۔قاری سوہیب احمد میرمحمدی نے خصوصی طور پر ریسکیو1122اور دیگراداروں کے شہداء کے لیے خصوصی دعا ئیں کیں۔انہوں نے ریسکیورز سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ریسکیورز انسانیت کی خدمت کا عظیم کام کرر ہے ہیں اللہ پاک اس کا بہترین انعام دیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ انسانیت کی خدمت صرف کام ہی نہیں ہے اللہ پاک کی عبادت ہے۔ چنانچہ اپنا کام خلوص نیت سے کریں تاکہ اللہ پاک خوش ہوں۔ ڈی جی ریسکیو1122 نے کہا کہ20دسمبرکا دن پاکستان کی تاریخ میںاُن فائر فائیٹرز کی عظیم شہادت کی یاد دلاتا رہے گا ۔جنہوں نے 20دسمبر 2008کو گکھڑ پلازہ میں لگنے والی آگ میں فائیر فائنٹنگ اور ریسکیو آپریشن کرتے ہوئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرکے فائر سروس کی تاریخ بد ل دی ۔ ان13فائیر فائٹرز میں سے چار کا تعلق پنجاب ایمرجنسی سروس (ریسکیو 1122)،ایک میونسپل فائیر بریگیڈ راولپنڈی ، چھ کاپاکستان آرڈیننس فیکٹری (POF)واہ اور دوکا سول ایویشن اتھارٹی (CAA)اسلام آباد سے تھا۔آج ان گمنام ہیرو ز کی نویں برسی کے موقع پر ہم تمام شہداء گکھڑ پلازہ کی بے مثال قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں ۔ ڈاکٹر رضوان نصیر نے کہا کہ بلا شبہ پاکستان میں 20دسمبر کا یہ واقعہ 9/11کے واقعہ کی طرح ہمیشہ یاد رہے گا ہم نے اپنے عظیم شہدا کی عظیم قربانیوں کو رائیگاں نہیں جانے دیااورگکھڑ پلازہ کے سانحہ کے بعد فائر سیفٹی کو ایک مشن کے طور پر اختیار کیا اس حوالے سے ریسکیو1122نے نہ صرف فائر ایمرجنسی رپسانس کو بہتر بنانے کے لئے جدید وہیکلز اور آلات میں اضافہ کیا بلکہ ریسکیورز کی تربیت بین الاقوامی معیار کی درسگا ہ ایمرجنسی سروسز اکیڈمی میں جدید پیرائے پر کی گی ۔ریسکیو 1122ہمہ وقت اُونچی عمارتوں میں موجود خطرات کی نشان دہی میں اپنا موثر کردار ادا کر رہی ہے تاکہ عمارتوں میں قانون کے مطابق سیفٹی سیٹنڈرڈ کو یقینی بنایا جا سکے ۔مزید برآں ریسکیو 1122نے مقامی سطح پر کمیونٹی ایمرجنسی رپسانس ٹیمز کا قیام عمل میں لا کر عوام الناس کے لئے آگاہی اور تربیتی پروگرام کا انعقادبھی کر رہی ہے تاکہ سیفٹی کلچرل بالخصوص بلڈنگ سیفٹی کو فروغ ملے ۔ڈی جی ریسکیو1122نے کہا کہ ان تمام کوششوں کے ساتھ ساتھ اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جا سکتا کہ بلند و بالا عمارت میں فائر سیفٹی انتظامات کا نہ ہونا آنے والے وقت کے سانحات ہیںاور سیفٹی کو یقینی بنانا ہم سب کی اجتماعی ذمہ دار ی ہے اور یہ وقت کی اہم ضرورت ہے کہ ہم سب ملکر محفوظ پاکستان کیلئے شعوری کوششوں کو یقینی بنائیںاور نیشنل فائر سیفٹی کوڈز( جو کہ پاکستان انجینیرنگ کونسل نے متعلقہ اداروں کے ساتھ مل کر مرتب کئے اور صدر پاکستان نے باقاعدہ ان کا افتتاح کیا )کو عمارتوں کی تعمیر میں سیفٹی کو یقینی بنانے کے لئے ملحوظ خاطر رکھا جائے۔میری عوام سے اپیل ہے کہ اپنی عمارتوں میں فائر سیفٹی کے معیار کو یقینی بنا کر سیفٹی کلچر کو فروغ دیں اور ائیے ہم سب عہد کریں کہ بلندوبالا عمارتوں کو محفوظ بنا کر قیمتی جانوں کو بچانے میں اپنا مو،ْثر کردار ادا کریں گے۔-پنجاب کے تمام اضلاع میں شہداء کے لئے دعائوں کا اہتمام کیا گیا بلخصوص ایمرجنسی سروسز ایکیڈمی میں فائونڈر ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر رضوان نصیرکی سربراہی میں شہداء کے لئے خصوصی دعا کا اہتمام کیا گیا اور تمام کیڈٹس کو شہداء کی بے مثال قربانیوں کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
اپنی رائے کا اظہار کریں -

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

پاکستان خبریں

تازہ ترین خبریں

تازہ ترین تصاویر


>