تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

بھارتی اداکاررشی کپورنے مسئلہ کشمیرکاحل بتادیا

  12 ‬‮نومبر‬‮ 2017   |    01:20     |     شوبز

نئی دہلی (ویب ڈیسک)لیجنڈری اداکار رشی کپور نے مقبوضہ جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کے اس بیان کی حمایت کر دی جس میں انہوں نے کہا تھاکہ جموں و کشمیر ہمارا جبکہ پاکستان کے زیر انتظام کشمیر پاکستان کا ہے۔تفصیلات کے مطابق جمو ں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ نے ایک بیان میں کہا تھا کہ کشمیر کا بطور

آزاد ریاست وجود ایک مناسب تجویز نہیں ہے کیونکہ کشمیر تین اطراف سے دنیا کی تین بڑی جوہری طاقتوں سے گھرا ہو اہے جن میں چین پاکستان اور بھارت شامل ہیں انکا مزید کہنا تھا کہ ہمیں یہ تسلیم کر لینا چاہیے کہ جموں و کشمیر ہمارا جبکہ پاکستان کے زیر انتظام کشمیر انکا ہے ۔ مقبوضہ جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کے اس بیان کے بعد سوشل میڈیا سے اس حوالے سے ملا جلا رد عمل پایا جاتا ہے۔کچھ لوگ اس بیان کو مثبت اورکچھ انتہائی منفی انداز میں لے رہے ہیں ۔ایسے مین بھارت کے لیجیندری اداکار رشی کپور جنکا اور جنکے آباؤ اجداد کا تعلق پشاور سے ہے نے مقبوضہ جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کے اس بیان کی مکمل حمایت کر دی ہے ۔ رشی کپور نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ فاروق عبداللہ جی سلام ، میں آپکے بیان سے مکمل اتفاق کرتا ہوں کہ ہمیں تسلیم کر لینا چاہیے کہ جموں و کشمیر ہمارا جبکہ پاکستان کے زیر انتظام کشمیر پاکستان کا ہے کیو نکہ یہی ہمارے مسائل کا واحد حل ہے۔انکا مزید کہنا تھا کہ میں 65برس کا ہو چکا ہوں میں چاہتا ہوں کے میں مرنے سے پہلے ایک مرتبہ پاکستان دیکھ لوں میں چاہتا ہوں کہ ہمارے بچے اپنے آبائی علاقے کو دیکھیں ۔بس کروا دیجیے فاروق عبداللہ ، جے ماتا دی ۔یاد رہے کہ بالی وڈ کے مشہور کپور خاندان کا تعلق خیبر پختونخواہ کے صوبائی دارلحکومت پشاور سے ہے جہاں اب تک انکے آباؤ اجداد کے مکانات موجود ہیں۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
اپنی رائے کا اظہار کریں -

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

تازہ ترین خبریں

تازہ ترین تصاویر


>