تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

ﻋﻮﺭﺕ ﺑﮭﯽ ﮐﺘﻨﯽ ﺑﮯ ﻭﻗﻮﻑ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﮯ

  10 جنوری‬‮ 2017   |    07:30     |     ڈیلی آزاد سپیشل

ﻋﻮﺭﺕ ﺑﮭﯽ ﮐﺘﻨﯽ ﺑﮯ ﻭﻗﻮﻑ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﮯ ﻭﮦ ﻓﺠﺮ ﮐﮯ ﻭﻗﺖ ﺍﭨﮭﯽ ﻧﻤﺎﺯ ﭘﮍﮪ ﮐﺮ ۔ ﮐﭽﻦ ﻣﯿﮟ ﺁﺋﯽ ﭼﻮﻟﮩﮯ ﭘﺮ ﭼﺎﺋﮯ ﮐﺎ ﭘﺎﻧﯽ ﭼﮍﮬﺎﯾﺎ۔ ﭘﮭﺮ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﻮ ﺟﮕﺎﯾﺎ ﺗﺎﮐﮧ ﻭﮦ ﺍﺳﮑﻮﻝ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺗﯿﺎﺭ ﮨﻮﺳﮑﯿﮟ ۔ ﮐﭽﻦ ﻣﯿﮟ ﺁﺋﯽ ﭼﺎﺋﮯ ﺑﻨﺎﺋﯽ ﺍﻭﺭ ﺍﭘﻨﮯ ﺳﺎﺱ ﺳﺴﺮ ﮐﻮ ﺩﮮ ﮐﺮ ﺁﺋﯽ۔ ﭘﮭﺮ ﺍﭘﻨﮯ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﺎ ﻧﺎﺷﺘﮧ ﺑﻨﺎﻧﮯ ﻟﮕﯽ ﺑﭽﮯ ﺗﯿﺎﺭ ﮨﻮﮐﺮ ﺁﺋﮯ ﺗﻮ ﺍﻥ ﮐﻮ ﻧﺎﺷﺘﮧ ﮐﺮﺍﯾﺎ ۔ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﺎ ﻟﻨﭻ ﺑﻨﺎﯾﺎ ۔ ﺍﺗﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﯽ ﻭﯾﻦ ﺁﮔﺌﯽ ۔ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﻮ ﺍﺳﮑﻮﻝ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺭﻭﺍﻧﮧ ﮐﯿﺎ ۔ ﻣﯿﺰ ﺳﮯ ﺑﺮﺗﻦ ﺳﻤﯿﭩﮯ۔ ﺍﺗﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﺷﻮﮨﺮ ﺁﻓﺲ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺗﯿﺎﺭ ﮨﻮﻧﮯ ﮔﺌﮯ ﺗﻮ ﺍﻥ ﮐﯽ ﺗﻤﺎﻡ ﭼﯿﺰﯾﮟ ﺍﻥ ﮐﻮ ﺩﯼ ﺍﻭﺭ ﺟﻠﺪﯼ ﺳﮯ ﮐﭽﻦ ﻣﯿﮟ ﺁﮐﺮ ﺷﻮﮨﺮ ﮐﺎ ﻧﺎﺷﺘﮧ ﺑﻨﺎﻧﮯ ﻟﮕﯽ ۔ ﺍﺑﮭﯽ ﺍﯾﮏ ﭘﺮﺍﭨﮭﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﻧﮉﺍ ﮨﯽ ﺑﻨﺎ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﭼﮭﻮﭨﯽ ﻧﻨﺪ ﮐﭽﻦ ﻣﯿﮟ ﺁﺋﯽ ﯾﮧ ﮐﮩﮧ ﮐﺮ ﻧﺎﺷﺘﮧ ﻟﮯ ﮔﺌﯽ ﮐﮧ ﻣﺠﮫ ﮐﻮ ﮐﺎﻟﺞ ﺳﮯ ﺩﯾﺮ ﮨﻮﺭﮨﯽ ﮨﮯ ۔ﺳﺎﺗﮫ ﮨﯽ ﺩﯾﻮﺭ ﯾﻮﻧﯿﻮﺭﺳﭩﯽ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺗﯿﺎﺭ ﮨﻮﮔﯿﺎ ﺗﮭﺎ ۔ ﺟﻠﺪﯼ ﺟﻠﺪﯼ ﺍﭘﻨﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﺍﻭﺭ ﺩﯾﻮﺭ ﮐﺎ ﻧﺎﺷﺘﮧ ﺑﻨﺎﯾﺎ۔ ﺍﻭﺭ ﻣﯿﺰ ﭘﺮ ﻟﮕﺎﯾﺎ۔ ﺍﺗﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﻧﻮ ﺑﺞ ﮔﺌﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﺁﻓﺲ ﮔﺌﮯ۔ ﺗﻮ ﺁﮐﺮ ﻣﯿﺰ ﺳﮯ ﺑﺮﺗﻦ ﺳﻤﯿﭩﮯ ۔ ﺳﺎﺱ ﺳﺴﺮ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﻧﺎﺷﺘﮧ ﺑﻨﺎﯾﺎ۔ ﺟﺐ ﺗﮏ ﺳﺎﺱ ﺳﺴﺮ ﻧﮯ ﻧﺎﺷﺘﮧ ﮐﯿﺎ ۔ ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﭽﻦ ﺳﻤﯿﭩﺎ ﺍﻭﺭ ﺑﺮﺗﻦ ﺩﮬﻮﺋﮯ۔ ﺳﺎﺱ ﺳﺴﺮ ﮐﮯ ﻧﺎﺷﺘﮧ ﮐﮯ ﺑﺮﺗﻦ ﺳﻤﯿﭧ ﺭﮨﯽ ﺗﮭﯽ ﮐﮧ ﺻﻔﺎﺋﯽ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻟﯽ ﻣﺎﺳﯽ ﺁﮔﺌﯽ ۔ ﺍﺱ ﮐﮯﺳﺎﺗﮫ ﻟﮓ ﮐﺮ ﺻﻔﺎﺋﯽ ﮐﺮﺍﺋﯽ۔ ﺟﺐ ﻣﺎﺳﯽ ﮐﻮ ﺭﺧﺼﺖ ﮐﯿﺎ ﺗﻮ ﮔﯿﺎﺭﮦ ﺑﺞ ﮔﺌﮯ ﺗﮭﮯ ۔ ﺍﺗﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﮔﮭﻨﭩﯽ ﺑﺠﯽ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺷﺎﺩﯼ ﺷﺪﮦ ﻧﻨﺪ ﺑﻤﻌﮧ ﺍﭘﻨﮯ ﺩﻭ ﮭﻮﭨﮯ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﮯ ﺁﮔﺌﯽ۔ ﺟﻠﺪﯼ ﺟﻠﺪﯼ ﻣﮩﻤﺎﻧﻮﮞ ﮐﯽ ﺗﻮﺍﺿﻊ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﭼﺎﺋﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﮐﭽﮫ ﻧﺎﺷﺘﮧ ﺑﻨﺎﯾﺎ۔ ﺍﺗﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﺑﺎﺭﮦ ﺑﺞ ﮔﺌﮯ۔ ﺟﻠﺪﯼ ﺳﮯ ﮐﭽﻦ ﻣﯿﮟ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﺑﻨﺎﻧﮯ ﮔﺌﯽ ﺗﻮ ﺳﺎﺱ ﮐﯽ ﺁﻭﺍﺯ ﺁﺋﯽ ﺁﺝ ﮐﭽﮫ ﺍﮨﺘﻤﺎﻡ ﮐﺮﻧﺎ ﮐﮭﺎﻧﮯ ﻣﯿﮟ۔ ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﭼﮍﮬﺎﯾﺎ ﭼﻮﻟﮩﮯ ﭘﺮ۔ﺍﻭﺭ ﺟﻠﺪﯼ ﺟﻠﺪﯼ ﺭﻭﭨﯿﺎﮞ ﺑﻨﺎﻧﮯ ﻟﮕﯽ ﮐﯿﻮﻧﮑﮧ ﺍﯾﮏ ﺑﺞ ﺭﮨﺎ ﺗﮭﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺑﭽﮯ ﺁﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﺗﮭﮯ ۔ ﺑﭽﮯ ﺍﺳﮑﻮﻝ ﺳﮯ ﺁﺋﮯ ﺗﻮ ﺟﻠﺪﯼ ﺟﻠﺪﯼ ﺍﻥ ﮐﻮ ﻣﻨﮧ ﮨﺎﺗﮫ ﺩﮬﻠﻮﺍﮐﺮ ﺍﻭﺭ ﮐﭙﮍﮮ ﺑﺪﻟﻮﺍﮐﺮ ﺍﻥ ﮐﻮ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﮐﮭﻼﯾﺎ۔ ﭘﮭﺮ ﭼﮭﻮﭨﯽ ﻧﻨﺪ ﺑﮭﯽ ﮐﺎﻟﺞ ﺳﮯ ﺁﮔﺌﯽ ﺍﻭﺭ ﺩﯾﻮﺭ ﺑﮭﯽ ﻭﺍﭘﺲ ﺁﮔﯿﺎ ۔ ﺳﺐ ﮐﮯ ﻟﮯ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﻟﮕﺎﯾﺎ ﺍﻭﺭ ﺟﻠﺪﯼ ﺟﻠﺪﯼ ﺭﻭﭨﯿﺎﮞ ﺑﻨﺎﻧﮯ ﻟﮕﯽ ﺟﺐ ﺳﺐ ﮐﮭﺎ ﮐﺮﺍﭨﮫ ﭼﮑﮯ ﺗﻮ ﺗﯿﻦ ﺑﺞ ﭼﮑﮯ ﺗﮭﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﺱ ﮐﻮ ﺍﯾﮏ ﺩﻡ ﺑﮭﻮﮎ ﮐﺎ ﺍﺣﺴﺎﺱ ﮨﻮﺍ۔ ﺍﺱ ﻧﮯ ﻣﯿﺰ ﭘﺮ ﮨﺎﭦ ﭘﺎﭦ ﻣﯿﮟ ﺩﯾﮑﮭﺎ ﺍﯾﮏ ﺑﮭﯽ ﺭﻭﭨﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﭽﯽ ﺗﮭﯽ ۔ ﻭﮦ ﻣﯿﺰ ﮐﮯ ﺑﺮﺗﻦ ﺍُﭨﮭﺎ ﮐﺮ ﮐﭽﻦ ﻣﯿﮟ ﺟﺎﻧﮯ ﻟﮕﯽ ﺗﻮ ﺍﺱ ﮐﺎ ﺷﻮﮨﺮ ﮔﮭﺮ ﻣﯿﮟ ﺩﺍﺧﻞ ﮨﻮﺍ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﻧﮯ ﺍﺱ ﮐﻮ ﺩﯾﮑﮭﺘﮯ ﮨﯽ ﮐﮩﺎ ﺑﮍﯼ ﺑﮭﻮﮎ ﻟﮕﯽ ﮨﮯ ﺟﻠﺪﯼ ﺳﮯ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﻧﮑﺎﻟﻮ ﻭﮦ ﺍﭘﻨﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺟﻠﺪﯼ ﺟﻠﺪﯼ ﺭﻭﭨﯿﺎﮞ ﺑﻨﺎﻧﮯ ﻟﮕﯽ ﺟﺐ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﻟﮕﺎﯾﺎ ﺗﻮ ﭼﺎﺭ ﺑﺞ ﺭﮨﮯ ﺗﮭﮯ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﺁﺟﺎﻭ ﺗﻢ ﺑﮭﯽ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﮐﮭﺎﻟﻮ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺣﯿﺮﺕ ﺳﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﮐﯽ ﻃﺮﻑ ﺩﯾﮑﮭﺎ۔ﺍﺱ ﮐﻮ ﺧﯿﺎﻝ ﺁﯾﺎ ﮐﮧ

ﺻﺒﺢ ﺳﮯ ﺍﺱ ﻧﮯ ﮐﭽﮫ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﮭﺎﯾﺎ۔ ﻭﮦ ﺍﭘﻨﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﮐﮯﺳﺎﺗﮫ ﮐﮭﺎﻧﺎ ﮐﮭﺎﻧﮯ ﺑﯿﭩﮫ ﮔﺌﯽ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺭﻭﭨﯽ ﮐﺎ ﻧﻮﺍﻟﮧ ﻣﻨﮧ ﻣﯿﮟ ﮈﺍﻻ ﺗﻮ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺁﻧﮑﮫ ﺳﮯ ﺍﯾﮏ ﺁﻧﺴﻮ ﻧﮑﻞ ﮔﯿﺎ - ﺍﺱ ﮐﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﻧﮯ ﭘﻮﭼﮭﺎ ﮐﮧ ﺗﻢ ﺭﻭﺭﮨﯽ ﮨﻮ ﮐﯿﻮﮞ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺳﻮﭼﺎ ﺍﻥ ﺳﮯ ﮐﯿﺎ ﮐﮩﻮﮞ ﺍﻥ ﮐﻮ ﮐﯿﺎ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﺳﺴﺮﺍﻝ ﻣﯿﮟ ﮐﺘﻨﯽ ﻣﺤﻨﺖ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﯾﮧ ﺭﻭﭨﯽ ﮐﺎ ﻧﻮﺍﻟﮧ ﻣﻠﺘﺎ ﮨﮯ ﺟﺲ ﮐﻮ ﻟﻮﮒ ﻣﻔﺖ ﮐﯽ ﺭﻭﭨﯽ ﮐﮩﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﮐﻮ ﺟﻮﺍﺏ ﺩﯾﺎ ﮐﮧ ﮐﭽﮫ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺷﻮﮨﺮ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﻋﻮﺭﺕ ﺑﮭﯽ ﮐﺘﻨﯽ ﺑﮯ ﻭﻗﻮﻑ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﮯ ﺑﻐﯿﺮ ﮐﺴﯽ ﻭﺟﮧ ﮐﮯ ﺭﻭﻧﮯ ﻟﮕﺘﯽ ﮨﮯ ۔ عورت اس سب محنت کا پھل آپ کے کہے ہوئے احساس کے کچھ بول ہے خواتیں کا احترم کریں انہیں عزت دیں ان ساتھ اچھا ٹائم گزاریں اللہ پاک سب کو پیار محبت کی زندگی عطا کریں آمین

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
87%
ٹھیک ہے
6%
کوئی رائے نہیں
1%
پسند ںہیں آئی
5%
اپنی رائے کا اظہار کریں -

انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مین

loading...

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

تازہ ترین تصاویر


>