تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

پی ایس ایل فرنچائز مالکان کی مخالفت کے باجود پی سی بی ٹی ٹین لیگ کا حامی

  14 ‬‮نومبر‬‮ 2017   |    03:20     |     کھیل

لاہور(ویب ڈیسک)پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل)فرنچائز مالکان کی مخالفت کے باوجود پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) ٹی ٹین لیگ کی حمایت میں ڈٹ گیا اور کہا کہ وہ لیگ کی حمایت سے دستبردار نہیں ہوگا۔لیگ کا میزبان امارات کرکٹ بورڈ ہے جہاں پی سی بی اپنی ہوم سیریز کراتا ہے۔پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نجم سیٹھی کا کہنا ہے کہ ٹی ٹین لیگ سے پاکستان سپر لیگ

مالکان کے مفادات پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔مصدقہ ذرائع کا کہنا ہے کہ فرنچائزوں نے ٹی ٹین لیگ پر اپنے تحفظات ظاہر کیے اور کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ اس لیگ کے لیے اپنے کھلاڑیوں کو ریلیز نہ کرے اور لیگ کی حمایت سے دستبردار ہوجائے۔ پہلی ٹی 10 لیگ میں حصہ لینے والی چھ ٹیموں میں پنجاب لیجنڈز، پختون، مراٹھا عربینز، کیرالہ کنگز، بنگال ٹائیگرز اور ٹیم سری لنکا شامل ہیں۔دبئی میں ہونے والے ڈرافٹ میں پانچ فرنچائزز مالکان نے اپنے کھلاڑیوں کو حتمی شکل دے دی ہے۔شاہد آفریدی (پختون)، سرفراز احمد(بنگال ٹائیگرز)، اوئن مورگن (کیرالہ کنگز)، شعیب ملک (پنجاب لیجنڈز)اور وریندر سہواگ(مراٹھا عربئنز)اس لیگ کے آئیکونک کرکٹرز قرار پائے ہیں اور یہی پانچوں کرکٹرز اپنی اپنی ٹیموں کی قیادت بھی کریں گے۔اس لیگ میں شرکت کرنے والے پاکستانی کرکٹرز میں مصباح الحق، عبدالرزاق، عمر اکمل، محمد عامر، عماد وسیم، سہیل خان، سہیل تنویر، کامران اکمل، رومان رئیس، محمد نواز، وہاب ریاض، محمد عرفان، احمد شہزاد، فہیم اشرف، فخرزمان، حسن علی، جنید خان، عمر گل، حسان خان، اسامہ میر، محمد سمیع اور انور علی شامل ہیں۔انٹرنیشنل کھلاڑیوں میں بنگلہ دیش کے تمیم اقبال، شکیب الحسن، ویسٹ انڈیز کے ڈیرن سیمی، ڈیرن براوو، کیرون پولارڈ، سیموئل بدری، لینڈل سمنز، نیوزی لینڈ کے لیوک رانکی، انگلینڈ کے الیکس ہیلز، عادل رشید، کرس جارڈن اور سری لنکا کے کمار سنگاکارا اور رنگانا ہیر اتھ کے نمایاں ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں فرنچائز مالکان نے نئے فارمیٹ کی مخالفت کی اور کہا کہ یہ فارمیٹ پاکستان سپر لیگ کو متاثر کرسکتا ہے، لیکن نجم سیٹھی بورڈ کے موقف پر ڈٹے رہے اور کہا کہ اس نئے ٹورنامنٹ سے پاکستان سپر لیگ کی مقبولیت اور فرنچائزوں کے معاہدوں پر کوئی اثر نہیں پڑے گا، ٹی ٹین مختصر فارمیٹ کا ٹورنامنٹ ہے جو چار دن میں ختم ہوجائے گا۔پی ایس ایل اس ٹورنامنٹ کے تین ماہ بعد ہوگا، اس لیے مفادات کے تصادم کا تاثر درست نہیں ہے، چوںکہ پاکستان کرکٹ بورڈ اپنی ہوم سیریز متحدہ عرب امارات میں کراتا ہے اس لیے پاکستان کرکٹ بورڈ امارات کرکٹ بورڈ کے خلاف نہیں جاسکتا۔ایک تجویز یہ آئی کہ اگر ٹی ٹین کی حمایت کی جاتی ہے تو پھر پی سی بی امارات لیگ کی حمایت کرے، یہ لیگ بھی ایک پاکستانی فرنچائز کے مالک نے خریدی ہوئی ہے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
اپنی رائے کا اظہار کریں -

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

تازہ ترین خبریں

تازہ ترین تصاویر


>