تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

12معروف ویب سائٹس بند کر دی گئیں ، وجہ کیا بنی ؟

  16 دسمبر‬‮ 2016   |    01:40     |     ٹیکنالوجی

ڈھاکہ (ڈیلی آزاد نیوز ڈیسک )ڈھاکا میٹرو پولیٹن پولیس نے کرکٹ میچوں میں سٹے بازی پر قابو پانے کیلئے 12 ویب سائٹ بند کرنے کیلئے بنگلہ دیشی ٹیلی کمیونیکیشن ریگولیٹری کمیشن کو خط لکھ دیا ہے۔انسداد کرپشن یونٹ کے ساتھ معاملات کا انتہائی باریک بینی سے جائزہ لینے والے بنگلہ دیشی کرکٹ بورڈ کو اس بات کا یقین ہے کہ ان ویب سائٹ کے ذریعے غیرقانونی بیٹنگ کی جاتی ہے۔بنگلہ دیش میں بیٹنگ غیرقانونی ہے لیکن کرکٹ ٹیم کی کامیابیوں اور خصوصاً 2012 میں بنگلہ دیشی پریمیئر لیگ متعارف کرائے جانے کے بعد سے یہ قابو سے باہر ہوتی جا رہی ہے اور صرف یہی نہیں بلکہ اس خطے کے لوگ انڈین پریمیئر لیگ اور دیگر عالمی میچوں میں بھی بیٹنگ میں ملوث ہیں۔پولیس کا ماننا ہے کہ یہ ویب سائٹس اجتماعی بیٹنگ میں اہم کردار ادا کر رہی ہیں جہاں ان کے نمائندگے میدان میں موجود ہوتے ہیں۔ایک پولیس آفیشل نے بتایا کہ بنگلہ دیش پریمیئر لیگ کے حالیہ ایڈیشن میں بیٹنگ کے شبے میں اسٹیڈیم اندر اور اطراف سے تین بھارتی اور چار پاکستانی شہریوں سمیت کم از کم 60 افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔ان تمام افراد کو بعد میں بنگلہ دیشی قوانین کے مطابق 100 ٹکا ضمانت پر رہا کردیا گیا۔پولیس افسر نے بتایا کہ ایک سٹے باز کو شائقین میں تلاش کرنا آسان ہوتا ہے کیونکہ وہ میچ دیکھنے کے بجائے مسلسل فون پر گفتگو میں مصروف رہتے ہیں۔سائبر سیکیورٹی اور کرائن یونٹ کے ڈپٹی کمشنر نظم الاسلام نے تصدیق کی کہ بنگلہ دیشی ٹیلی کمیونیکیشن ریگولیٹری کمیشن کو خط لکھ دیا گیا ہے۔پولیس نے بتایا کہ حال ہی میں بیٹنگ نے انتہائی ڈرامائی موڑ لیا ہے

جہاں معاشرے کے تمام ہی طبقے اس وقت اس میں ملوث ہیں اور ملک کے ہر کونے میں کسانوں سے لے کر مزدور اور رکشا کھینچنے بھی اس جرم کا ارتکاب کر رہے ہیں۔2012 میں شروع ہونے والی بنگلہ دیش پریمئر لیگ (بی پی ایل) دوسرے سیزن میں ہی بنگلہ دیش ٹیم کے سابق کپتان محمد اشرفل سمیت دیگر چارکھلاڑیوں کے میچ فکسنگ میں ملوث ہونے کے انکشاف کے بعد معطل کی گئی تھی تاہم 2015 میں لیگ کا دوبارہ آغاز ہو گیا تھا۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
اپنی رائے کا اظہار کریں -

انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مین

loading...

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں


>