تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

اب انسان چاند پر پہنچنے کی کوشش کر رہا ہے اور فصائے محیط پر پرواز کرتے

  5 ‬‮نومبر‬‮ 2017   |    07:24     |     ٹیکنالوجی

اسلام آباد (ڈیلی آزادنیو زڈیسک)اب انسان چاند پر پہنچنے کی کوشش کر رہا ہے اور فصائے محیط پر پرواز کرتے ہوئے چاند تک پہنچ جانا سائسندانوں کے لئے اب کوئی مسئلہ نہیں ہے کہ اس کے امکان کے لئے قیل و قال کی جائے ۔بلکہ اب یہ اندازہ کیا جا رہا ہے کہ اس مہم پر کتنا خرچ ہو گا ۔ان حالات میں دلبررائٹ اور آرویل رائٹ کسے یاد رہیں ۔جنہوں نے سب سے پہلے امریکہ میں پرواز کی تھی ۔

فصائے آسمانہ پر پرواز کرنے میں دلچسپی کا اظہار کیا تو صورتِ حال ایسی تھی کہ لوگ زمین اوپر اُٹھنے کے امکانات کو چنداں وقعت نہ دیتے تھے ۔دلبرا اور آرویل نے بہت جلد دریافت کر لیا کہ ہوائی حرکیات کے بارے میں جتنے نظریات موجود ہیں ۔اس میں سے بیشتر اصل مقصد سے ہٹے ہوئے ہیںانہوں نے خود ایک نل بنایا جس میں پروا کے خود ہی تجربات کرتے رہے ۔وہ دونوں غیر شادی شدہ تھے ۔دن بھر سائیکل کی دکان پر کام کرتے اور گھر آکر اپنا سارا وقت تجربات میں گزارتے ۔آخر انہوں نے کنٹرول کا ایک نظام دریافت کرلیا جس کے ذریعے سے ہوا کا دباؤ مشین کے مختلیف حِصوں میں بدلتا رہتا تھا اور اسے رجسڑ کرالیا ۔ہوا کے نل میں جو تجربات کرتے رہتے تھے ان کی بنا پر انہوں نے قبل ازوقت علان کردیا کہ ہم ہوا میں پرواز کریں گے ،چنانچہ ایک ایسا جہاز تیار کر لیا جس میں ابتدائی تخمینے کے خلاف ایک چوتھائی سے نصف تک قوت ہوتی تھی ۔ان کا جہاز چار سلنڈر کا تھا ۔اس میں بارہ گھوڑوں کی طاقت کا انجن لگایا گیا جو پٹرول سے چلتا تھا ایک مسافر کا وزن شامل کر کہ جہاز کا کُل وزن ساڑھے سات سو پونڈ تھا ۔دسمبر 1903 کو یہ جہاز کٹی ہاک پہنچا 17 دسمبر کو آرویل نے اس میں چار مرتبہ پرواز کی ۔جہاز تقریباََ ایک منٹ پرواز میں رہا اور صرف تیس میل فی گھنٹے کی رفتار سے پرواز کر سکا مگر آجکل تو ہوائی ترقی کر کے کہاں سے کہاں پہنچ گئے ہیں۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
اپنی رائے کا اظہار کریں -

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں


>