تازہ ترین :

شروع اللہ کے نام سے جو بڑا مہربان نہایت رحم والا ہے ِ

الم ﴿۱﴾یہ کتاب (قرآن مجید) اس میں کچھ شک نہیں (کہ کلامِ خدا ہے۔ خدا سے) ڈرنے والوں کی رہنما ہے ﴿۲﴾ جو غیب پر ایمان لاتے اور آداب کے ساتھ نماز پڑھتے اور جو کچھ ہم نے ان کو عطا فرمایا ہے اس میں سے خرچ کرتے ہیں 

ad

قومی ترانے پر کھڑے نہ ہونے پر ماں بیٹی سمیت 3افراد گرفتار

  12 جنوری‬‮ 2017   |    03:09     |     بین الاقوامی

چینئی(نیوز ڈیسک)بھارت کی ریاست تمل ناڈو کے دارالحکومت چینئی کے بین الاقوامی فلمی میلے کے دوران قومی ترانہ بجنے کے دوران کھڑے نہ ہونے پرماں بیٹی سمیت 3 افراد کو گرفتار کر لیا گیا۔بھارتی میڈیا کے مطابق یہ واقعہ شہر کے ایک مال میں واقع تھیئٹر میں پیش آیا جہاں قانون کی طالبہ شریلا، ان کی ماں اور کیرالہ سے آنے والے بجان کے وندو ایک بلغارین فلم 'گلوری' دیکھنے گئے تھے۔بھارتی سپریم کورٹ نے گذشتہ ماہ سینما گھروں میں فلم کی ابتدا سے قبل قومی ترانہ بجانے کی ہدایات دیتے ہوئے سبھی کو اس دوران کھڑے ہونے کے احکامات دیے تھے۔بہت سے لوگ عدالت کے اس حکم کو درست نہیں مانتے، اس لیے اس کی مخالفت شروع کی تھی اور شریلا اس کے مخالفین میں سے ایک ہیں۔شریلا کا کہنا

تھا کہ ہم پر اعتراض کرنے والے کچھ لوگ مجھ سے اور میری ماں سے تو درخواست کر رہے تھے لیکن ونود کے ساتھ انھوں نے زبردستی کی۔شریلا اور ونود کے مطابق معاملہ اس وقت شروع ہوا جب کچھ لوگوں نے ترانے کے دوران ان کے نہ کھڑے ہونے پر اعتراض کیا جس کے بعد فلمی میلے کا اہتمام کرنے والے کچھ لوگ آئے اور ان سے باہر نکلنے کو کہا گیا۔انھوں نے کہا: 'کچھ دیر بعد تین پولیس اہلکار آئے اور ہم تینوں کو تھانے لے کر گئے لیکن کیس درج کرنے کے بعد انھوں نے ہمیں جانے دیا کیونکہ پولیس نے جس دفعہ کے تحت مقدمہ درج کیا تھا اس میں ہمیں تبھی گرفتار کیا جا سکتا تھا جب ہم دوسرے لوگوں کو کھڑے ہونے سے روکتے۔شریلا نے بتایا کہ 'میں اصول کے تحت کھڑی نہیں ہوئی کہ قومی ترانے سے حب الوطنی کا جذبہ نہیں جاگتا۔ مجھے سپریم کورٹ کا حکم ظالمانہ اور سفاکانہ لگتا ہے۔اس واقعے کے بعد ونود نے بھی بعض ان لوگوں کے خلاف حملہ کرنے کی شکایت درج کروائی جنھوں نے ان کا شناختی کارڈ چھیننے کی کوشش کی اور ان کے ساتھ دھینگا مشتی کی۔فلمی میلے کے ڈائریکٹر ای تھنگراج کا کہنا تھا کہ تینوں افراد کو خود پولیس تھیئٹر سے تھانے لے کر گئی تھی اور میلے کا اہتمام کرنے والوں میں سے اس میں کوئی شامل نہیں تھا۔انھوں نے بتایا کہ انھیں اطلاع ملی ہے کہ ناظرین کے دو دھڑوں کے درمیان گرما گرمی ہوئی تھی۔قومی ترانے کے معاملے ہی پر پڑوسی ریاست کیرالہ میں بھی گذشتہ ہفتے اس وقت ہنگامہ اٹھ کھڑا ہوا تھا جب ریاست میں بی جے پی کے ایک رہنما اے این رادھا کرشنن نے کیرالہ کی فلم اکیڈمی کے صدر کمل کو ملک سے باہر چلے جانے کے لیے کہا تھا۔گذشتہ ماہ کیرالہ کے بین الاقوامی فلمی میلے کے دوران کمل نے قومی ترانے کے دوران کچھ لوگوں کے کھڑے نہ ہونے پر انھیں گرفتار کرنے کے لیے آنے والی پولیس کو تھیئٹر میں جانے سے روک دیا تھا۔سپریم کورٹ کے حکم کے بعد ملک کے مختلف علاقوں میں اس طرح کے واقعات پیش آ چکے ہیں۔ زیادہ تر واقعات میں ایک گروہ دوسرے کو زبردستی کھڑا ہونے پر مجبور کرتا ہے جس کی وجہ سے ہال میں ہنگامہ شروع ہو جاتا ہے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
اپنی رائے کا اظہار کریں -

انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مین

loading...

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

بین الاقوامی خبریں

 
 

تازہ ترین تصاویر


>